شاعری

pictureملت کا پاسبان ہے محمد علی جناح

منظوم نظموں کا مجموعہ

مرتب : خورشید ربانی
ناشر : اکادمی ادبیات پاکستان
قیمت: 250 روپے
تشکیل ای بک: نوید فخر

اختر حسین جعفری

وہ جو تجھ سے پہلے کی راہ تھی
(قائداعظمؒ کے نام)
و ہ جوتجھ سے پہلے کا ذکر تھا
و ہ جوتجھ سے پہلے کی راہ تھی
کہیں صبح ذات گئی ہوئی
کہیں شامِ عشق بجھی ہوئی
کہیں دوپہر رہ ماندگاں پہ تنی ہوئی
کہیں چاند پچھلے وصال کے
کہیں مہر صبح کمال کے
کہیں زلف وصل مزاج پر
تہ گرد ہجر جمی ہوئی
کہیں آس تھی کہیں پیاس تھی
کہیں خشک حلق میں تےر تھا
کہیں بادبان جلا ہوا
کہیں سائبان میں چھید تھا
کوئی راز تھا
کوئی بھید تھاجسے مخبروں
جسے تاجروں نے رقم کیا تو کتاب میں
مرا حکم مےرے خلاف تھا
مےرا عدل مےری نظیر تھا سو حقیر تھا
مےرا بادشہ بھی فقیر تھا
یہ جو تےرے ہونے کا ذکر ہے
جو ترے ظہور کی بات ہے
مری بات ہے
مرا عشق ہے، مرا درد ہے
مرے حرف وصوت کی ذات ہے
مری راہ پر مری چھاو¿ں ہے
مرے ہاتھ میں مرا ہاتھ ہے

صفحات : 1 | 2 | 3 | 4 | 5 | 6 | 7 | 8 | 9 | 10 | 11 | 12 | 13 | 14 | 15 | 16 | 17 | 18 | 19 | 20 | 21 |
| 22 | 23 | 24 | 25 | انڈیکس |

تازہ ترین

کیا آپ صاحب کتاب ہیں؟

کیا آپ چاہتے ہیں کہ آپ کی تصنیف دنیا بھر میں لاکھوں شائقین تک پہنچے ؟ تو کتاب ”ان پیچ“ فارمیٹ میں اور سرورق سکین کر کے ہمیں ای میل یا ارسال کریں، ہم آپ کے خواب کو شرمندہ تعبیر کریں گے۔

مزید معلومات کے لئے یہاں کلک کریں