شاعری

pictureملت کا پاسبان ہے محمد علی جناح

منظوم نظموں کا مجموعہ

مرتب : خورشید ربانی
ناشر : اکادمی ادبیات پاکستان
قیمت: 250 روپے
تشکیل ای بک: نوید فخر

سید احسن شیرازی

ا ے قائدِاعظمؒ

تھا چہرہ¿ ماحول پہ ظلمت کا تسلط
تھا لائقِ تعزیر ہر اک جذبہءبیباک
ہر ذہن رسا پر تھا عجب خوف مسلط
ہر ولولہ بیمار
ہر وقت رذالت پہ کمر بستہ تھے اغیار
خاموش تھے سینوں میں اُمنگوں کے تقاضے
تھی ان میں نہ کچھ قوتِ گویائی و اظہار
ہر راہ تھی پُرخار
دیوانے یہ کہتے تھے کہ دیوانے کا ہے خواب
سب نے سرِ تسلیم کیا خم ترے آگے
جب مل گئی اس خواب کی تعبیر طرب تاب
ہر دکھ کا سمندر ہوا پایاب
تو نے اُفقِ زیست کو بخشا نیا خورشید
اک نقش نیا نقشہ¿ِ عالم پہ اُبھارا
آزادیءانساں کو کیا زندہءجاوید
ہر دل کو ملی راحتِ نایاب
ہر سمت بسی ہے تیرے افکار کی مہکار
ہے چار سو پھیلی تیرے آدرش کی تنویر
ہر ذرہ وطن کا ترا ممنون و پرستار
اے شاہد ِ معبود
تُو زندہ ہے اور زندہ ترا عزمِ معظم
لہراتے رہیں گے تیری عظمت کے پھریرے
اے سینہءاحساس کے ہر زخم کے مرہم
اے مشفقِ مسعود
اے عبدِ مکرم
اے قائد اعظمؒ
اے قائد اعظمؒ

صفحات : 1 | 2 | 3 | 4 | 5 | 6 | 7 | 8 | 9 | 10 | 11 | 12 | 13 | 14 | 15 | 16 | 17 | 18 | 19 | 20 | 21 |
| 22 | 23 | 24 | 25 | انڈیکس |

تازہ ترین

کیا آپ صاحب کتاب ہیں؟

کیا آپ چاہتے ہیں کہ آپ کی تصنیف دنیا بھر میں لاکھوں شائقین تک پہنچے ؟ تو کتاب ”ان پیچ“ فارمیٹ میں اور سرورق سکین کر کے ہمیں ای میل یا ارسال کریں، ہم آپ کے خواب کو شرمندہ تعبیر کریں گے۔

مزید معلومات کے لئے یہاں کلک کریں