شاعری

pictureملت کا پاسبان ہے محمد علی جناح

منظوم نظموں کا مجموعہ

مرتب : خورشید ربانی
ناشر : اکادمی ادبیات پاکستان
قیمت: 250 روپے
تشکیل ای بک: نوید فخر

انور حارث

قائداعظمؒ

قویٰ تھے مضمحل احساس سفلی روح پر طاری
جگر چھلنی تھا اور اک جوئے خوں آنکھوں سے تھی جاری

حجازی میکدے میں جس نے اب تک کی تھی میخواری
وہی مسلم تھا اس جنت نشاں میں بدتر از ناری

فلاکت کی گھٹائیں، مسلم ہندی پہ تھیں چھائی
غلامی نے دبا رکھے تھے سب احساسِ خودداری

مسیحا آن پہنچا آخرش تائیدِ غیبی سے
بڑی مدت سے جس کی منتظر تھی قوم بیچاری

تن مردہ میں اپنے زندگی کی روح اک پھونکی
دیا سب نیند کے ماتوں کو اک پیغام بیداری

صدا کانوں میں آئی صورِ اسرافیل کی صورت
مسلماں جاگ اٹھا، ہو گئی کافور بیماری
بنایا قائداعظمؒ کو ہم نے رہبرِ منزل
نظر میں جس کی جچتی ہی نہیں رستے کی دشواری

ہے سینہ اس کا مخزنِ گوہرِ راز مسلماں کا
وہ اسلامی سیاست کا ہے خود قرآن، خود قاری

سکھائی میرے ساقی نے نئی اک طرزِ مےخواری
بغیر شیشہ و ساغر مجھے رہتی ہے سرشاری

صدا قائدؒ کی ہے اپنے لیے بانگِ درا حارث
ادھر سے حکم آیا اور ادھر چلنے کی تیاری

 

٭مسلم لیگ کے جلسے میں یکم فروری ۳۴۹۱ کو پڑھی گئی

صفحات : 1 | 2 | 3 | 4 | 5 | 6 | 7 | 8 | 9 | 10 | 11 | 12 | 13 | 14 | 15 | 16 | 17 | 18 | 19 | 20 | 21 |
| 22 | 23 | 24 | 25 | انڈیکس |

تازہ ترین

کیا آپ صاحب کتاب ہیں؟

کیا آپ چاہتے ہیں کہ آپ کی تصنیف دنیا بھر میں لاکھوں شائقین تک پہنچے ؟ تو کتاب ”ان پیچ“ فارمیٹ میں اور سرورق سکین کر کے ہمیں ای میل یا ارسال کریں، ہم آپ کے خواب کو شرمندہ تعبیر کریں گے۔

مزید معلومات کے لئے یہاں کلک کریں