نثر

نثر (2)
picture

دلّت ادب

مصنف : خورشید قائم خانی
اچھوتوں کو عام طور پر قابل رحم تو سمجھا جاتا ہے مگر سیاسی طور پر یہ خیال کرکے بالکل نظرانداز کردیا جاتا ہے کہ ان کے پاس کچھ ہے ہی نہیں جیسے سیاسی حفاظت کی ضرورت پڑے۔ جبکہ حقیقت میں اُن کے سیاسی مفادات دیگر سب لوگوں سے زیادہ بڑی نوعیت کے ہیں۔ یہ نہیں کہ کہ ان کے پاس بڑی جاگیرو جائیداد ہیں جنہیں ضبطی کے خلاف حفاظت چاہئے۔ بلکہ برعکس اس کے ان کا کُل وجود ہی ضبط ہو چکا .......

مطالعہ کے لئے یہاں کلک کریں

picture

واردات

مصنف : پریم چند
زندگی کا بڑا حصہ تو اسی گھر میں گزر گیا۔ مگر کبھی آرام نصیب نہ ہوا، میرے شوہر دنیا کی نگاہ میں بڑے نیک اور خوش اخلاق اور بیدار مغز ہونگے، لیکن جس پر گزرتی ہے، وہی جانتا ہے۔ دنیا کو تو ان لوگوں کی تعریف میں مزا آتا ہے، جو اپنے گھر کو جہنم میں ڈال رہے ہوں اور غیروں کے پیچھے اپنے آپ کو تباہ کیے جاتے ہوں، جو گھر والوں کیلیے مرتا ہے، اسکی تعریف دنیا والے نہیں کرتے۔ ..............

مطالعہ کے لئے یہاں کلک کریں

picture

آکاش کا جھومر
مصنف : حمزہ حسن شیخ

ان کی زندگی میں مادر وطن کی محبت ایک بنیادی عنصر کی طرح شامل ہے۔اس لئے وطن کی سلامتی ،وطن کے لئے ایثار اور وطن کے لئے جان قربان کر دینا ان کے خاص موضوعات ہیں۔ان کی تمام کہانیاں اسی تکون کے زاویے ہیں۔میرا مسئلہ یہ ہے کہ میں نے بچپن بھی بوڑھوں کی طرح گزارا ہے۔اس لئے بچہ بن کر ان کہانیوں کو پڑھ بھی نہ سکا۔ ہاں ایک سنجیدہ اور اوسط عمر کے آدمی کی حیثیت سے _ _ _ _

مطالعہ کے لئے یہاں کلک کریں

picture

موت کے سوداگر
ترتیب و تدوین : خورشید قائم خانی

برصغیر،مشرق اور مغربی سامراج پر بین القوامی تجزیہ نگاروں کے تبصرے
جنوبی ایشیاء کے حالات اس سے دیگر گوں ہیں اور ایسی دشنام طرازی پر مبنی رسوا کن کہانیوں سے بھرپور جو میگزین اور رسالوں کی سرخیوں کی زینت بنیں۔ ہتھیار بیچنے کی خواہش نے جارج بش کو ایک ایسے کردار میں بدل دیا ہے جو ایک ہی وقت میں کسی محبوبہ کے ساتھ محبت کی پینگیں بھی بڑھائے اور ساتھ ہی اپنی زوجہ کو بھی ہاتھ سے نہ نکلنے دے۔

مطالعہ کے لئے یہاں کلک کریں

picture

بلیک واٹر

مصنف : طارق اسماعیل ساگر

’’بلیک واٹر‘‘ نے عراق کے بعد پاکستان کا رخ کیا تو پاکستان کے آزاد اور بیدار معزز صحافیوں نے حکومت کی پراسرار خاموشی کو توڑتے ہوئے نعرہ حق بلند کیا اور بلیک واٹر کی گھناؤنی کارروائیوں سے پاکستانیوں کو آگاہ کرنے کا بیڑہ اٹھایا۔ جن صحافیوں نے یہ نعرہ مستانہ بلند کیا۔ ان میں نمایاں نام طارق اسماعیل ساگر کا ہے جو اپنی جرأت مندی کے لئے پاکستان اور بیرون ملک ایک خصوصی مقام رکھتے ہیں ۔

مطالعہ کے لئے یہاں کلک کریں

picture

خطرناک لاشیں

مصنف : ابن صفی

محکمہ سراغ رسانی کے ڈائریکٹر جنرل رحمان صاحب نے مضطربانہ انداز میں سپرنٹنڈنٹ کیپٹن فیاض کے نمبر ڈائیل کئے اور پھر تھوڑی دیر بعد ماؤتھ پیس میں بولے رحمان اسپیکنگ! فوراً آؤ۔ میں آفس سے بول رہا ہوں۔ سلسلہ منطقع کرکے انہوں نے سامنے پھیلے ہوئے کاغذات سمیٹے اور میز پر رکھی ہوئی گھنٹی بجائی۔ ایک خوش پوش اور وجیہہ آدمی چق ہٹا کر اندر داخل ہوا۔ رحمان صاحب آنکھوں کی جنبش سے کاغذات ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

مطالعہ کے لئے یہاں کلک کریں

صفحات : 1 | 2 | 3 | 4 | 5 | 6 | 7 | 8 | 9 | 10 | 11 | 12 |

تازہ ترین

کیا آپ صاحب کتاب ہیں؟

کیا آپ چاہتے ہیں کہ آپ کی تصنیف دنیا بھر میں لاکھوں شائقین تک پہنچے ؟ تو کتاب ”ان پیچ“ فارمیٹ میں اور سرورق سکین کر کے ہمیں ای میل یا ارسال کریں، ہم آپ کے خواب کو شرمندہ تعبیر کریں گے۔

مزید معلومات کے لئے یہاں کلک کریں